آزادی مارچ سے حکومت بوکھلا گئی، اسلام آبادمیں فوج طلب

0 297

اسلام آباد: جمعیت علمائے اسلام (ف) کے آزادی مارچ کے وفاقی دارالحکومت پہنچنے کے پیشِ نظر جہاں وزیراعظم عمران خان نے ممکنہ اشتعال انگیزی سے نمٹنے کے لیے اپنی جماعت کے سینیئر اراکین سے مشاورت کی تو وہیں مقامی انتظامیہ نے امن و امان کی صورتحال برقرار رکھنے کے لیے فوج کو طلب کرلیا۔

خیال رہے کہ اتوار 27 اکتوبر کو کراچی سے شروع ہونے والا آزادی مارچ بدھ 30 اکتوبر کو لاہور پہنچا تھا اور توقع ہے کہ گوجر خان میں مختصر قیام کے بعد یہ جمعرات 31 اکتوبر کو اسلام آباد میں داخل ہوگا۔

تفصیلات کے مطابق وزیراعظم، اسلام آباد کے پشاور موڑ پر متوقع احتجاج کے حوالے سے مطمئن نظر آئے اور انہوں نے پنجاب میں آزادی مارچ کی صورتحال کو ’انتہائی بری‘ قرار دیا۔

تاہم حکومت نے کسی بھی ناخوشگوار صورتحال سے نمٹنے کے لیے حساس مقامات پر فوجی اہلکار تعینات کردیے ہیں۔

علاوہ ازیں اسلام آباد کی مقامی انتظامیہ نے حساس ترین علاقے ریڈ زون میں ٹرپل ون بریگیڈ کو تعینات کرنے کی بھی درخواست دے دی ہے۔

واضح رہے کہ ریڈ زون میں پارلیمنٹ ہاؤس، سپریم کورٹ، دفتر خارجہ، پاکستان ٹیلی ویژن، ریڈیو پاکستان اور ڈپلومیٹک انکلیو موجود ہے۔

تبصرے
Loading...